دھرنا

آج کل ملک کے بیشتر علاقے دھرنوں کی زد میں ہیں۔ کیا آپ دھرنے کے بارے میں کوئی شعر پیش کر سکتے ہیں؟ ہم نے کافی ڈھونڈا مگر بس یہی اشعار ہی مل سکے:

جہاں بیٹھنا آہ کرنا اسے
بہانہ نزاکت پہ دھرنا اسے
میر حسن
دیکھو کان نہ دھرنا ان پر
دل کی سب آوازیں جھوٹی
بقا بلوچ

آپ جانتے ہیں کہ یہاں دھرنا بطور فعل آیا ہے، جب کہ شعر اسم کے بارے میں چاہیے۔

تبصرے

  • ہیں بت پرست دیر میں حاجی ہیں کعبہ میں
    طالب رضائے دوست کے دھرنے دیئے ہوئے
    رند لکھنوی

  • بہت شکریہ الیاس صاحب۔ یہ غالباً دھرنا بطور اسم کے پہلا سنجیدہ شعر ہے۔

سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔