ارکان کے لیے ہدایات

April 2016 کو ترمیم کیا میں ارکان کے لیے ہدایات
«1

تبصرے

  • کچھ الفاظ محض مقامی طور پر بولے جاتے ہیں۔ اردو محفل میں بھی بہت سے الفاظ جو پاکستابیوں کو استعمال کرتے ہوئے دیکھا ہے اور میری قطعی سمجھ میں نہیں آ سکے، ان سے میرے خیال میں احتراز بہتر ہے۔ ایسا ایک لفظ مجھے یاد آ رہا ہے ’مک مکا‘ نہ جانے اس سے کیا مراد ہے۔ یہ لفظ بہر حال لغت کے لئے اجنبی قرار پائے گا، لیکن اگر اردو کم میں اسی فی صد سے زیادہ اس لفظ کو سمجھتے ہوں تو قبول کیا جانا چاہئے۔

  • اعجاز صاحب، مک مکا پنجابی سے پاکستانی اردو میں آ گیا ہے، اس کا مطلب ہے کچھ دے دلا کر معاملہ خلاص کر دینا۔ مثال کے طور پر ٹریفک والے نے پکڑ لیا تو اسے رشوت دے کر مک مکا کر لینا، وغیرہ۔ لیکن آپ کی بات درست ہے کہ اس ضمن میں بہت احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔

  • ظفر صاحب، خلاص بھی تو قابل اعتراض ٹھہرے گا؟

  • علی صاحب، خلاص تو ہماری لغت میں بھی ہے، اور اس کا مطلب لکھا ہے

    liberation, emancipation, redemption, deliverance, release, discharge, acquittal, freedom, manumission, exemption, immunity

  • اردو کو عام طور پر پاکستان سے جوڑا جاتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ پاکستان میں بولی جانے والی زبان میں مقامی زبانوں کے الفاظ جگہ پا رہے ہیں۔ کیانکہ یہ الفاظ یہاں کی روز مرہ کا حصہ ہیں اور تحریر میں بھی ان کا استعمال کیا جا رہا ہے اس لئے ان کو اس زندہ لغت میں ہونا چاہیئے۔۔ مک مکا بھی ایک ایسا ہی لفظ ہے

  • شاہد صاحب، مک مکا لغت میں موجود ہے، لیکن ایک مسئلہ ہے کہ اسے ڈھونڈنے کے لیے اعراب لگانا پڑیں گے۔ یعنی مُک مُکا

  • ظفر صاحب
    ہماری لغت میں کوئی لفظ تلاش کرتےوقت ہم اگراعراب نہیں بھی لگاتے جبکہ وہ اعراب کے ساتھ لغت میں درج ہے تو بھی لغت ہمیں مدد کرتی ہے۔ مثال کے طور پر لفظ ماحولِ کار کے لیے اگر ماحول کار ہی لکھیں تو ایک آپشن کے طور پر ماحولِ کار سامنے آ جاتا ہے جس پر کلک کرنے سے انگریزی ترجمہ سامنے آ جاتا ہے۔

  • اب تو عربوں نے بھی اعراب لگانا چھوڑ دیئے ہیں۔ ہم اردو والے کیوں اٹکے ہوئے ہیں

  • خوش خبری: اعراب کا ٹنٹا ختم ہو گیا ہے۔ اب بغیر اعراب لگائے بھی الفاظ تلاش کیے جا سکتے ہیں۔

  • عیدی!

  • ویسے ممانعت تہ نہیں ہے ناں۔ جو لگا سکے لگا بھی لے۔ بعض جگہ اعراب کی ضرورت پڑجاتی ہے۔

  • جی ارشد صاحب، میں تو خود اعراب کو ضروری سمجھتا ہوں لیکن اس کو لغت میں لفظ تلاش کرنے کے لیے شرط نہیں ہونا چاہیے کیوں کہ اگر کسی کو درست تلفظ معلوم نہیں تو وہ کیسے لفظ تلاش کرے گا۔ اعراب ہی کی وجہ سے لغت میں بہت ایسے الفاظ شامل ہو گئے ہیں جو پہلے ہی سے موجود تھے۔

  • جی بالکل

  • لیکن تلفظ کیسے بتایا جائے گا؟

  • assalam o alaikum g...
  • Wa alaikum Assalam

  • اردو میں اعراب کا التزام روا رکھنا ضروری نہیں تاہم جہاں ہم شکل حروف کی وجہ سے ابہام کی صورت ہو وہاں اعراب ضرور دیے جانے چاہئیں۔ لغت میں تلاش کے دوران اعراب کی شرط ختم کرنا یقینا خوش آئند ہے۔ اب معنی کے لیے حروف کی معینہ تعداد (جو غالباً 100 ہے) کا اصول بھی کچھ نرم کیجیے۔

  • اعراب کے بغیر لکھا ہوا لفظ سیاق و سباق سے واضع ہوجاتا ہے.
    مثال کے طور پر لفظ "رل" جب اکیلا ہوگا تو دو معنی دے گا اور جب کسی فقرے میں ہوگا تو یک معنی ہوگا.
  • مک مکا کا لفظ تو اب کثرت سے ذرائع ابلاغ بھی استعمال کر رہے ہیں۔ اور میں سمجھتا ہوں کہ وہ الفاظ جو بھی جو مقامی زبانوں سے اردو میں آتے ہیں اگر اردو کے لشکر میں شامل ہو جائیں تو کچھ حرج نہیں۔ مثلاً مشتاق یوسفی صاحب کی کتب کی فصاحت میں کم از کم مجھے تو کوئی شبہ نہیں لیکن اردو میں جن الفاظ کی وہ آمیزش کرتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں وہ اردو کے نہیں لیکن فصاحت میں روک بھی نہیں۔ اسی طرح حالی کی اردو، خواجہ حسن نظامی کی اردو اور علامہ اقبال کی اردو میں بھی زمین اور آسمان کا فرق ہے۔ میری اپنی رائے تو یہ ہے کہ اردو کی مختلف قرآئتیں اس کا حسن دوبالا کرتی ہیں اس لئے اس فورم کو محدود نہیں کرنا چاہئے

  • زندہ بانیں بہتے دریا کی مانند ہوتی ہیں جس میں ادھر سے ندی نالے چشمے جھرنے آ آ کر گرتے ہیں اور اس سے نہریں کھالے بھل موکھے نکل نکل کر دوسری زمینوں کو سیراب کرتے رہتے ہیں۔ اگرکوئی نئے شامل ہونے والے الفاظ پرکفر کے فتوے لگا لگا کر انھیں دائرہ زبان سے خارج کرتا رہے تو پھر زبان رکی ہوئی جھیل بن کر رہ جائے گی جس پر رفتہ رفتہ کائی تہیں جما لیتی ہے۔

    عرفِ عام میں ایسی جھیل کو جوہڑ کہا جاتا ہے۔

  • Meray khayal main to "slang" ke tarz par "muk muka" jasay alfaaz ke ijazat honi chahiay. Bhalay "standard language" main aap is ko mamoo qaraar dain. Jasay American slang main "bad" 'great' k liay istimaal hota hai. Baqi English ke varieties iss par aitiraz bhi nai krti aur is ko apni "social setting" main iss mafhoom main istimaal bhi nai karteen. Jo lafz jis social setting main aik mafhoon k iblaagh ka zareeaa hain. Unn ko istimaal kia jaa sakta hai.
  • ایم عثمان اعظم صاحب مک مکا کا لفظ اس لغت میں موجود ہے۔ اور دیگر سلینگ الفاظ جو فحش نہیں اور عام
    استعمال میں ہیں وہ بھی اس لغت میں شامل کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔
    دیکھیے مک مکا کا اندراج:'
    https://ur.oxforddictionaries.com/ترجمہ_کریں/اردو-انگریزی/مک_مکا

  • Shukria Humaura Ashraf sahibah !
  • Ahliyaan e forum kissi ko maloom hai keh urdu main ism (noun) kee tazeek o tanees kay koi qawaid hain ya sub simaee hain ? Shukria
  • *tazkeer o tanees
  • السلام عليکم و رحمتہ اللہ و برکاتہُ
    ايک اچھا سلسلہ ہے
    شاد و سلامت رہيں
  • Its so nice,its great,very kind of all. Thanks.
  • ندیم و عسکری صاحبان: ازراہِ کرم فورم کی دوسری لڑیوں پر جا کر بحث میں حصہ لیجیے۔ یا اگر آپ چاہیں تو اپنی مرضی کی کوئی لڑی بھی شروع کر سکتے ہیں۔

  • جناب ظفر صاحب طویل عرصے سے غیر فعال اراکین کو واپس لائیں یا فارغ کریں ۔ فورم پر جمود طاری ہے اس تالاب میں پتھر مارنا آپ کی ذمہ داری ہے جناب

سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔