سنسکرت زبان، ابتدا اور تاریخ

عام طور پر دیکھا گیا ہے کہ زبان پہلے تشکیل پاتی ہے اور اس کا نام بعد میں پڑتا ہے یا رکھا جاتا ہے۔ اس کی عمدہ مثال ہمارے سامنے سنسکرت زبان کی ہے۔ سنسکرت زبان پورے شمالی ہندوستان میں مغرب تا مشرق پورے ایک ہزار سال تک (1500 تا 500 قبل مسیح) پھلتی پھولتی اور پروان چڑھتی رہی۔

تبصرے

  • اس دور میں (1500 تا 500 قبل مسیح) کے دوران چاروں وید تخلیق کیے گئے اور پانِنی نے اس زبان کے قواعد تخلیق کی جو "اشٹادھیائی" کے نام سے موسوم ہیں۔ لیکن اس طویل عرصے کے دوران اس زبان کا کوئی نام نہیں پڑا۔ پانِنی نے اس کے لیے صرف "بھاشا" کا لفظ استعمال کیا ہے۔

  • اس کا نام "سنسکرت" بہت بعد میں جا کر پڑا۔ لفظ "سنسکرت" پہلے زبان کے معنی میں مستعمل نہیں تھا، بلکہ اس کے لغوی معنیٰ ہیں، "شسستہ وشائستہ"۔ بعد میں یہی لفظ زبان کے لئے استعمال ہونے لگا۔

  • شاہد صاحب، آپ کی بات بالکل بجا ہے کہ زبان پہلے بنتی ہے اور اسے نام بہت بعد میں دیا جاتا ہے۔ یہی حال قوموں، علاقوں اور ملکوں کا بھی ہے۔ آپ کی اس بات کی تائید یوں بھی ہوتی ہے کہ حال ہی میں خاکسار نے ایک زبان دریافت کی ہے جس کے بولنے والے تعداد میں صرف چار سو ہیں اور وہ صرف ایک چھوٹے سے گاؤں میں بولی جاتی ہے۔ اس زبان کا نام؟ ’اپنی
    بولی۔ ہے نا مزے کیا بات؟‘

  • واقعی آپ نے بہت زبردست دریافت کی ہے ظفر صاحب

سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔