ایک غلط شعر

<افکار کم یاب>
<ایک غلط العام شعر>
راہ-دور- عشق میں روتا ہے کیا
آگے آگے دیکھئے ہوتا ہے کیا
میر تقی میر(کلیات-میر،علمی مجلس دہلی،1948)
اس شعر کا پہلا مصرعہ یوں مشہور ہے
"ابتدائے عشق ہے روتا ہے کیا"
جو غلط ہے

<احمد سجاد بابر
وائس چیئر مین
افکار پاک>

تبصرے

  • احمد صاحب

    یہ شعر غلط نہیں ہے۔ میر نے پہلے ابتدائے عشق ہی لکھا تھا، لیکن برسوں بعد خود اپنے کلام پر’ اصلاح‘ کر کے اسے راہ دور کر دیا۔

    ظاہر ہے کہ شاعر ایسا کرتے ہی رہتے ہیں لیکن اگر کوئی مجھ سے پوچھے تو میں یہ کہوں گا کہ ابتدائے عشق میں جو روانی، تسلسل اور سلاست ہے وہ راہ دور میں بالکل نہیں ہے۔

    اس لیے میں سمجھتا ہوں کہ ابتدائے عشق غلط نہیں ہے بلکہ ایک عظیم شاعر نے خود ہی ایک شعر دو مختلف طریقوں سے کہا ہے۔

  • تسلسل کی بات تو ٹھیک کی آپ نے۔۔۔۔۔ابتدائے عشق میں زیادہ روانی ہے
  • آپ اپنی بات کے حق میں کوئ حوالہ بھی دیجئے
سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔