The way you access our dictionary content is changing.

As part of the evolution of the Oxford Global Languages (OGL) programme, we are now focussing on making our data available for digital applications, which enables a greater reach in delivering and embedding our language data in the daily lives of people and providing more immediate access and better representation for them and their language.

Because of this, we have made the decision to close our dictionary websites.
Our Oxford Urdu living dictionary site closed on 31st March 2020, and this forum closed with it.

We would like to warmly thank everyone for your participation and support throughout these years – we hope that this forum, and the dictionary site, have been useful
You were instrumental in making the Oxford Global Languages initiative a success!

Find out more about what the future holds for OGL:
https://languages.oup.com/oxford-global-languages/

ایک غلط شعر

<افکار کم یاب>
<ایک غلط العام شعر>
راہ-دور- عشق میں روتا ہے کیا
آگے آگے دیکھئے ہوتا ہے کیا
میر تقی میر(کلیات-میر،علمی مجلس دہلی،1948)
اس شعر کا پہلا مصرعہ یوں مشہور ہے
"ابتدائے عشق ہے روتا ہے کیا"
جو غلط ہے

<احمد سجاد بابر
وائس چیئر مین
افکار پاک>

تبصرے

  • احمد صاحب

    یہ شعر غلط نہیں ہے۔ میر نے پہلے ابتدائے عشق ہی لکھا تھا، لیکن برسوں بعد خود اپنے کلام پر’ اصلاح‘ کر کے اسے راہ دور کر دیا۔

    ظاہر ہے کہ شاعر ایسا کرتے ہی رہتے ہیں لیکن اگر کوئی مجھ سے پوچھے تو میں یہ کہوں گا کہ ابتدائے عشق میں جو روانی، تسلسل اور سلاست ہے وہ راہ دور میں بالکل نہیں ہے۔

    اس لیے میں سمجھتا ہوں کہ ابتدائے عشق غلط نہیں ہے بلکہ ایک عظیم شاعر نے خود ہی ایک شعر دو مختلف طریقوں سے کہا ہے۔

  • تسلسل کی بات تو ٹھیک کی آپ نے۔۔۔۔۔ابتدائے عشق میں زیادہ روانی ہے
  • آپ اپنی بات کے حق میں کوئ حوالہ بھی دیجئے
سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔