قحبہ

قحبہ=اس کا مطلب بدکار عورت،طوائف ہے،یہ
عربی لفظ"قحب(ہر حرف پر زبر)سے مشتق ہے۔جس کا مطلب ہے"کھانسنا"طوائف کا "کھانسی"سے کیا تعلق؟
زمانہ جاہلیت میں طوائف متوجہ کرنے کے لئے کھانسی کا سہارا لیتی تھی۔

تبصرے

  • جدید عربی میں کھانسی کو "سعال" کہتے ہیں. "قحب" در اصل چھوٹے مویشیوں (بھیڑ، بکری، سور) کی ایک بیماری ہے جو سینے میں گھر بنا لینے والے کیڑوں کی وجہ سے انہیں چھوٹی عمر میں لاحق ہوتی ہے اور اکثر خود بخود ٹھیک ہو جاتی ہے. اس کی علامات میں البتہ کھانسی شامل ہے. شاید طوائف کو (حقیقی اور استعارہ میں) بیماریوں کا گھر ہونے کے سبب یہ نام دیا گیا ہو.

  • فرہنگ آصفیہ میں بھی قحبہ کے معنی کھنکھار کر بلانے والی عورت یعنی بدکار فاحشہ عورت لکھے ہیں۔عربی لفظ قحبہ قحب سے ہی مشتق ہے جس کے معنی کھانسنا کے ہیں،چونکہ یمن کی فاحشہ عورتیں مردوں کو کھنکھار کر بلاتی تھیں۔اس لئے ان کو قحبہ کے نام سے موسوم کرتے ہیں۔بعض کا خیال ہے کہ قحبہ عربی لفظ وقاحت سے مشتق ہے۔ جس کے معنی بے حیائی اور بے شرمی ہیں، لیکن پہلی بات زیادہ قرین قیاس ہے۔

سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔