سرائیکی لفظ۔۔۔۔۔ونج

سراییکی لفظ ونج=سرائیکی میں لفظ "ونج"جانا کے معنی میں آتا ہے۔ایک قدیم انگریزی ورب ہے wend(جانا)جس سے Goکی دوسری فارم wentبنائ گئ،امکان ہے کہ اسے سے ونج بنا یا پھر wendونج سے وجود میں آیا۔ونج سے ہی اردو کا"ونجارا/بنجارا"وجود میں آیا۔ونج کا ایک ماخذ ہڑپہ تہذیب بھی ہو سکتی ہے جہاں تجارت کے لئے لفظ"وانیجا"اور سفری تاجر کے لئے"ونج بھاکا"رائج تھے

تبصرے

  • September 2016 کو ترمیم کیا

    احمد صاحب آپ نے نہایت کارآمد اور دلچسپ معلومات فراہم کی ہیں جو الفاظ کے ماخد کے بارے میں اس لڑی میں بیش قیمت اضافہ ہیں۔ میں صرف ایک دو چیزوں کا اضافہ کرتا چلوں۔

    تمام آریائی زبانوں کی ماں پروٹو انڈو یورپین (پی آئی ای) زبان کو سمجھا جاتا ہے (یہ مصنوعی زبان ہے جسے ماہرینِ لسانیات نے از سرِ نو تخلیق کیا ہے)۔ اس میں ایک لفظ پایا جاتا ہے ویندھ
    (wendh)
    جس کا مطلب ہے مڑنا یا لہرانا۔ اسی سے ملتا جلتا لفظ ونڈ بمعنی ہوا ہے جومختلف شکلوں میں درجنوں ہند آریائی زبانوں میں آج بھی مستعمل ہے۔ مثال کے طور پر سنسکرت میں ہوا کو وایو کہا جاتا ہے۔ چونکہ و اکثر ب میں بدل جاتا ہے، چنانچہ اس لفظ کی تدبھو شکل باؤ ملتی ہے جو ’باؤ کے گھوڑے پر سوار ہونا‘ کی شکل میں اردو میں آج بھی رائج ہے۔

    قیاس کہتا ہے کہ ہوا میں چونکہ حرکت بھی ہے اور مڑنے کا عنصر بھی شامل ہے، اس لیے ویندھ ہی سے وِنڈ بنا۔

  • گڈ۔۔۔۔۔شکریہ
سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔