گول توند والا ٹیلہ

August 29 کو ترمیم کیا میں یہ لفظ کہاں سے آیا؟

ابھی کچھ دن پہلے ترکی کے مشہورِ زمانہ آثارِ قدیمہ گوبیکلی ٹیپے

(Göbekli Tepe)

کے بارے میں پڑھ رہا تھا۔ یہ دنیا میں کہیں بھی انسانی آبادی کے قدیم ترین آثار ہیں اور ان کی عمر کا تخمینہ آٹھ سے دس ہزار برس قبل مسیح ہے۔

اس نام میں گوبیکلی ترکی میں گول توند کو کہتے ہیں، جب کہ ٹیپے کے بارے میں پتہ چلا کہ ترکی میں ٹیلے کو کہا جاتا ہے۔ تھوڑا اور کریدا تو معلوم ہوا کہ ٹیپے دراصل ٹیپہ ہے، اور اسی اصول کے تحت ٹیپے بنا ہے جیسےترکی اور جدید فارسی دونوں میں فرزانہ فرزانے بن جاتا ہے، یا دیوانہ دیوانے۔

اب یہاں سے کہانی سنسنی خیز موڑ میں داخل ہوتی ہے۔
ہندکو زبان میں ہوبہو یہی لفظ یعنی ٹیپہ (ے مجہول کے ساتھ)بعینہ اسی معنی میں یعنی بطور ٹیلہ استعمال ہوتا ہے۔ ظاہر ہے کہ ہندکو والوں نے ترکی سے لیا ہے، کب اور کیسے، یہ وقت کی دھند میں گم ہے۔

اب ذرا ترک ٹیپہ کا اشتقاق بھی دیکھ لیجیے۔ یہ ترکی میں قدیم پروٹو التائی لفظ ٹوپو سے آیا ہے۔ جب کہ قدیم اویغور اور کاراخارند زبانوں میں بھی ٹوپو ہی ہے۔ ان زبانوں میں یہ پہاڑ کی چوٹی کے لیے استعمال ہوتا ہے۔

یہاں تک تو بات واضح تھی۔ لیکن ایک منٹ، پہاڑ کی چوٹی کو انگریزی میں کیا کہتے ہیں؟

ٹاپ۔

انگریزی میں یہ لفظ قدیم جرمینک زبان سے آتا بتایا گیا ہے، لیکن مزید تفصیل نہیں ملتی۔ سوائے اس کے کہ ولندیزی میں بھی ٹاپ ہے، جب کہ جرمن میں ساپف ہے۔ اس سے پیچھے یہ لفظ کہاں سے آیا ہے، ماخذ خاموش ہیں۔

تو دیکھیے کہ زبان کے ڈانڈے کہاں کہاں سے عنکبوت کے تاروں کی طرح اندر سے ملے ہوئے ہیں۔۔۔

تبصرے

  • بہت دلچسپ۔ چند سال قبل جنوبی بحر الکاہل کے جزائر میں کام کر رہا تھا۔ چلتے وقت خالد احمد صاحب کے لفظیات پر مضامین کا تازہ ترین مجموعہ ہمراہ لے رکھا تھا۔ اس کے ایک باب میں "ٹیپو سلطان" پر بحث ہے۔ دھندلا سا یاد پڑتا ہے کہ فتح علی خان کا نام میسور کے قریب ایک پہاڑی جزیرے پر دفن کسی صوفی بزرگ کی عقیدت میں رکھا گیا تھا جو مذکورہ پہاڑی کی مناسبت سے جنوبی ہند کی کسی زبان میں "ٹیپو " بابا کہلاتے تھے۔ اتفاق دیکھیے کہ یہ سطور پڑھتے وقت میں "ٹونگا" نام کے ملک میں جس جزیرے پر تھا، اس کا نام "ٹونگا ٹاپو" ہے۔ جب مقامی لوگوں سے ٹاپو کا معنی پوچھا تو بتایا گیا "متبرک پہاڑی"۔۔ آج تک ہکا بکا ہوں۔

  • تھوڑی سی مزید مٹی جھاڑی ہے تو کچھ اور نگینے نکل آئے ہیں

    ہندی کا لفظ ٹوپی بالکل سامنے کا ہے، جو واضح طور پر ٹاپ اور ٹیپہ کے قبیل کا ہے کیوں کہ ٹوپی جسم کی چوٹی یعنی سر پر پہنی جاتی ہے۔

    ہندی کے علاوہ پراکرت، نیپالی، بھوج پوری، اور ہندوستان کی کئی دوسری زبانوں میں بھی اسی قبیل کے لفظ ٹوپی کے معنی میں برتے جاتے ہیں۔ سنسکرت میں بھی ٹوپیکا ہے جس کا مطلب پگڑی ہے۔

  • واقعی۔ ویسے یہ جو بدھ مت کے "ستوپ" ہوتے ہیں، کیا ان کا بھی کوئی تعلق ہے اس لفظ سے؟

  • جناب قاضی صاحب، آپ نے درست جگہ انگلی رکھی ہے۔ سٹوپا اصل میں سنسکرت کا ستوپ
    स्तूप
    ہے، اور اس کا مطلب سر کی چوٹی ہے۔ اس کے علاوہ دوسرے مطالب، جو میرے خیال سے ضمنی ہیں، سر کے اوپر بالوں کا گچھا ۔۔۔ جسے چوٹی کہا جاتا ہے ۔۔۔ اور وہی سٹوپا ہیں۔

    بالوں کی چوٹی کی بات کریں تو اولڈ نورس میں ٹاپر کا مطلب بھی یہی ہے۔

    اسی معنی میں انگریزی کا ’ٹفٹ‘ بھی پیشِ نظر رہے، جو صوتی اعتبار سے ٹاپ سے کچھ زیادہ دور نہیں۔

    اسی قبیلے کا انگریزی لفظ
    steep
    بھی مفید دکھائی دیتا ہے، جس کا مطلب چوٹی بہرحال نہ سہی، بلندی ضروری ہے۔

    ایک اور قابلِ ذکر بات یہ ہے کہ انگریزی میں سٹوپا کو
    tope
    کہتے ہیں، اور جب اس کا اشتقاق دیکھیں تو لکھا ملتا ہے

    perhaps from Punjabi ṭop hat

    لو کر لو جی گل۔۔۔

  • شاید پنجابی میں بھی ٹیلے کے لیے ٹبہ کا لفظ استعمال ہوتا ہے
    ٹوئے ٹبے
    کی ترکیب اونچ نیچ ،،، نشیب و فراز،،، کے لیے مستعمل ہے۔
    بابا فرید جب لاھور داتا صاحب کے مزار پر حاضری کے لیے تشریف لائے تو مزار سے چند سو گز کی دوری پر ایک ٹیلے پر قیام کیا،،،
    وہ جگہ آج
    بابا فرید دا ٹبہ
    کے نام سے مشہور ہے۔ بہت سے لوگ اسے دیکھنے جاتے ہیں۔
    ۔۔۔
    ترکی زبان میں ٹ کی آواز مفقود ہے۔ ت ہی ہے
    تِپِہ
    پ پر شد کے ساتھ۔
    واللہ اعلم
سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔