The way you access our dictionary content is changing.

As part of the evolution of the Oxford Global Languages (OGL) programme, we are now focussing on making our data available for digital applications, which enables a greater reach in delivering and embedding our language data in the daily lives of people and providing more immediate access and better representation for them and their language.

Because of this, we have made the decision to close our dictionary websites.
Our Oxford Urdu living dictionary site closed on 31st March 2020, and this forum closed with it.

We would like to warmly thank everyone for your participation and support throughout these years – we hope that this forum, and the dictionary site, have been useful
You were instrumental in making the Oxford Global Languages initiative a success!

Find out more about what the future holds for OGL:
https://languages.oup.com/oxford-global-languages/

بیت بازی

1468910

تبصرے

  • نہیں تو برف سا پانی تمہیں جلا دے گا
    گلاس لیتے ہوئے انگلیاں نہ چھو لینا

    عرفان صدیقی

  • اچھی صورت بھی کیا بری شئے ہے
    جس نے ڈالی بری نظر ڈالی
    (عالمگیرکیف ٹونکی)

  • یہ ایک سجدہ جسے تو گراں سمجھتا ہے
    ہزار سجدے سے دیتا ہے آدمی کو نجات
    (اقبال )

  • تابِ دل صرفِ جدائی ہو چکی
    یعنی طاقت آزمائی ہو چکی
    (میر تقی میر)

  • یہ قربتیں تو بڑے امتحاں لیتی ہیں فراز
    کسی سے واسطہ رکھنا تو دور کا رکھنا

  • ابھی تو پر بھی نہیں تولتا اڑان کو میں
    بلاجواز کھٹکتا ہوں آسمان کو میں

    اختر عثمان

  • نہ ملی اس رخِ روشن کی مکمل تصویر
    ڈھونڈنے والے فقط شمس وقمر تک پہنچے
    ( جوش )

  • یقین ہے دل کو، اگر ساکنان جنت سے
    جو کوئی سیر کرے گا اس دیار کا گل زار
    (سودا)

  • راہ تکتے ہوے جب تھک گئی آنکھیں میری
    تب تجھے ڈھونڈنے میری آنکھ سے آنسو نکلے

  • یہ سوچا تھا تری خاطر بہت موتی نکالوں گا
    میں جس رستے میں تھا اس میں سمندر ہی نہیں آیا

  • احساسِ عمل کی چنگاری جس دل میں فروزاں ہوتی ہے
    اس لب کا تبسم ہیرا ہے،اس آنکھ کا آنسو موتی ہے

  • یاروں کو بھی ہے بوسے کی غیروں کو بھی طلب
    ششدر وہ جانِ جاں ہے کسے دوں کسے نہ دوں
    (امیر مینائی)

  • نہ اتنی تیز چلے سرپھری ہوا سے کہو
    شجر پہ ایک ہی پتہ دکھائی دیتا ہے

    شکیب جلالی

  • یہ سرِ حق کھلا ہم پر حدیثِ مصطفیٰ پڑھ کر
    ہواے تند سے گرتے نہیں پتے کھجوروں کے
    ( علی احمد گجراتی)

  • آپؐ نے مسلمان کو کھجور کے درخت سے اس لیےمشابہ قرار دیا ہے کہ کھجور کا درخت ہمیشہ ہرا بھرا اورخزاں ناآشنا رہتا ہےاور اس کے پتے نہیں گرتے۔
    (فتح الباری)

  • یہ مسائل تصوف یہ ترا بیان غالب
    تجھے ہم ولی سمجھتے جو نہ بادہ خوار ہوتا
    (مرزا اسد اللہ خان غالب)

  • اے شوق کی بیباکی وہ کیا تیری خواہش تھی
    جس پر انہیں غصہ ہے انکار بھی حیرت بھی
    (حسرت موہانی)

  • یہ کائنات مرے بال و پر کے بس کی نہیں
    تو کیا کروں سفرِ ذات کرتا رہتا ہوں

  • نگہ بلند،سخن دلنواز،جان پرسوز
    یہی ہے رخت سفر،میر کارواں کے لیے

  • یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں​
    بھولنے والے کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں​
    (آغا حشر)

  • April 2017 کو ترمیم کیا

    نہ جانے اشک سے آنکھوں میں کیوں ہیں آئے ہوئے
    گزر گیا ہے زمانہ تجھے بھلائے ہوئے

  • یہ نوِید اَوروں کو جا سُنا، ہم اسیرِ دام ہیں اے صبا
    ہمیں کیا چمن ہے جو رنگ پر، ہمیں کیا جو فصلِ بہار ہے
    اکبرالہٰ آبادی

  • یہ کیا قیامت ہے باغبانوں کے جن کی خاطر بہار آئی
    وہی شگوفے کھٹک رہے ہیں تمہاری آنکھوں میں خار بن کر
    ساغر

  • راہ دورِ عشق میں روتا ہے کیا
    آگے آگے دیکھئے ہوتا ہے کیا
    (میرتقی میر)

  • اس نگر میں قیام ایسا ہے
    جیسے بے انت پانیوں میں سفر
    منیر نیازی

  • رو میں ہے رخشِ عمر کہاں دیکھیے تھمے
    نے ہاتھ باگ پر ہے نہ پا ہے رکاب میں

  • نظر میں بے رخی لب پر تبسم
    نہ جانے دل میں کیا ٹھانے ہوئے ہیں

  • نہ سوالِ وصل، نہ غرضِ غم، نہ حکایتیں نہ شکایتیں
    ترے عہد میں دلِ زار کے سبھی اختیار چلے گئے

    فیض احمد فیض

  • یہ ارتقا کا چلن ہے کہ ہر زمانے میں
    پرانے لوگ نئے آدمی سے ڈرتے ہیں

  • May 2017 کو ترمیم کیا

    نہ جانے کس کو پکارا گلے لگا کے مجھے
    مگر وہ میرا نہیں تھا جو نام اس نے لیا
    فیصل عجمی

سائن ان یا رجسٹر تبصرہ کرنے کے لئے۔